in

آیئے آپکو ملواتے ہیں ایک ایسے استاد سے جنہوں نے اپنی زندگی میں کبھی چھٹی نہیں کی…


آیئے آپکو ملواتے ہیں ایک ایسے استاد سے جنہوں نے اپنی زندگی میں کبھی چھٹی نہیں کی۔2001 میں جب انہیں بلڈ کینسر کا علم ہواتو اس کے باوجود بھی وہ ریٹائرمینٹ تک 16 سال کالج جاتے رہے۔آج ملئے اس عظیم استاد سے، پروفیسر عثمان علی صاحب۔
ورلڈ ٹیچر ڈے کے حوالے سے پروفیسر عثمان علی صاحب پر مبنی ڈاکومنٹری سپاٹ ٹائمز پر دیکھیے۔


Report

Written by Swat Valley

What do you think?

122 points
Upvote Downvote

Comments

Leave a Reply
  1. Bohot herane howa
    Bohot rony ka dil chaha
    Q pata hai?
    2001 mai sir ko blood cancer howa
    2003 main onke 15 ya 20 first year k students mai mai b shamil ta our mai ne be kabe on ka class miss nahe keua.
    Qunke sir jis tarah geography parhate te na main to belkul geography ka dewana banata main os sal k bad wo sub kuch chora dobara pre medical main admission lea
    Leken sir ke har lecture ka lafz lafz mujy aaj tak yad hai. Aaj tak wo atlas mery pas hai jo unhony lany ka kaha ta dokha ue keua ta ke unho ne oxford english vala lany ka kaha ta leken mery pas paise nahe ty to urdu vala lea ta.
    Bat ue hai k sir ne aik sal har lecture deua leken kabe aik bar be apne bemare ka zikar na keua
    Aaj 06-10-2017 taqreban 14 ya 15 sal bad ue video mele deka to mera to demagh goom gea
    You are a great great personality. Aap ka muqam to hamary delo main bohot oncha ta our ab our be oncha hogea.
    Allah aap ko lambe umar our achche sehat dy aameen

    Sir mai saidu medical collage mai lab technecian k post par ho jab be transfusion ka masla ho our mujhy khedma tora moqa dogy to mujhy delle khoshe hoge ue mera no hain
    03469440547

  2. ایک مشفق اور نفیس استاد. اللہ تعالی پروفیسر صاحب کے عمر اور اولاد میں برکت ڈال دے.

  3. استاد محترم کو میرا سلام کہنا،
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    اے دوستو ملیں تو بس اک پیام کہنا
    استاد محترم کو میرا سلام کہنا

    کتنی محبتوں سے پہلا سبق پڑھایا
    میں کچھ نہ جانتا تھا سب کچھ مجھے سکھایا
    ان پڑھ تھا اور جاہل ۔۔۔۔قابل مجھے بنایا
    دنیا ئے علم و دانش کا راستہ دکھایا
    اے دوستو ملیں تو بس ایک پیام کہنا
    استاد محترم کو میرا سلام کہنا

    مجھ کو خبر نہیں تھی آیاہوں میں کہاں سے
    ماں باپ اس زمیں پر لائے تھے آسمان سے
    پہنچا دیافلک تک استاد نے یہاں سے
    واقف نہ تھا ذرا بھی اتنے بڑے جہاں سے
    استاد محترم کو میرا سلام کہنا

    جینے کا فن سکھایا،مرنے کا بانکپن بھی
    عزت کے گر بتائے ، رسوائی کے چلن بھی
    کانٹے بھی راہ میں ہیں ،پھولوں کی انجمن بھی
    تم فخر قوم بننا اور نازش وطن بھی
    ہے یاد مجھ کو ان کا اک اک کلام کہنا
    استاد محترم کو میرا سلام کہنا

    جو علم کا علم (جھنڈا)ہے استاد کی عطا ہے
    ہاتھوں میں جو قلم ہے استاد کی عطا ہے
    جو فکر تازہ دم ہے استاد کی عطا ہے
    جو کچھ کیا رقم ہے استاد کی عطا ہے
    اسی عطا سے چمکا حاطب کا نام کہنا
    استاد محترم کو میرا سلام کہنا۔۔۔

    اللہ تعالٰی دئے پروفیسر صاحب تہ شفاء کاملہ عاجلہ مستمرہ ورکئ او اللہ تعالٰی دئے عمر کے برکت واچوی۔۔آمین

  4. عمران صيب هم دغه شان خودداره مخلصه خلک پيدا کول غواړى او حوصله افزائې ئې پکار ده د نن خلک او ميډيا خو الله دې ورته ښه لار سېدا کړى او ستا مننه او ستاينه قدرمن شې

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Loading…

0

Malam Jabba Swat Valley A Dazzling beauty on Earth Photography : Suliman SN

Beautiful Bahrain, Swat Valley, Khyber Pakhtunkhwa P a k I s t a n Photo credi…